Breaking

Search Here Anything

Monday, September 9, 2019

پولیس کی بدمعاشیوں کے بعد سرکاری احکم نے یہ کونسا قانون بنادیا

پولیس کی بدمعاشیوں کے بعد سرکاری احکم نے یہ کونسا قانون بنادیا


پولیس کے بے جا تشدد اور بدمعاشی پر سرکاری احکام نے یہ کونسا قانون لاگو کردیا۔ سرکاری احکام نے ایک قانون جاری کیا ہے جس کی رو سے تھانہ پولیس میں محمکہ پولیس سمیت کو عام شہری بھی سمارٹ فون استعمال نہیں کر سکے گا۔ اس سے تو یہ ثابت ہوتا ہے کہ پولیس کو کسی نہ کسی طریقے سے بچایا جارہا ہے۔ کیونکہ پولیس کے تشدید اور بدمعاشی 
روز بروز بڑھتی جا رہی ہے۔ 

Bad Bahavior of Punjab Police
Bad Bahavior of Punjab Police


اس پولیس کے تشدد کا شکار ہونے والے میں صلاح الدین جو کہ پولیس کے تشدد سے جان کی بازی ہار گیا۔ اس کے علاوہ عامر مسیح کو بھی اتنا تشدد کا نشانہ بنایا گیا کہ وہ ہسپتال میں جا کر دم توڑ گیا۔ اور رپورٹ سے پتا چلا کہ اس کے جسم کی کئی ہڈیاں پولیس کے تشدد سے ٹوٹ گی تھیں۔ 

مزید براں ایک بوڑھی عورت کے ساتھ بدمعاشی کی گی تو ایک عورت کو چوری کے الزام میں بے شمار تشدد کا نشانہ بنایا گیا۔ا ور ساتھ میں بجلی کے کرنٹ کے جھٹکے بھی دیے گیے۔  ایک بڑا سوال پیدا ہوتا ہے کہ محمکہ پولیس میں کیا درندوں کو سرکاری ملازمت دی گی ہے۔ کیا پولیس کا کام صرف تشدد کر کے پتا لگانا ہے۔ بلکہ پولیس کا کام ہے کہ وہ پورے معاملہ کی اچھی طرح پڑتال کرے اور حقیقت کا سوراخ لگاے۔ نہ یہ کہ مظلوم افراد پر ظلم کے پہاڑ توڑ دیے جائیں۔




عثمان بزدار نے کہا ہے کہ تشدد میں ملوث مجرم پولیس اہلکاروں کی معطلی کافی نہیں بلکہ ان کو ہمیشہ کے لیے ملازمت سے برطرف کردیا جاے اور ان لوگوں کو سخت سے سخت سزا دی جاے جس کے وہ مستحق ہیں۔