Breaking

Search Here Anything

Monday, July 29, 2019

قبرستان میں خوفناک تلاش ۔ خوفناک سچی کہانی

قبرستان میں شرط کا نتیجہ


میں آج آپ کو جو کہانی سنانے جا رہے ہوں یہ حقیقت پر مبنی ہے ۔ اور اس کہانی کے کرداروں کو فرضی نام دیے گے ہیں ۔
یہ ان دنوں کی بات ہے جب ہم چھوٹے تھے اور ہم کھیلتے گودے رہتے تھے ۔

قبرستان میں خوفناک تلاش ۔ خوفناک سچی کہانی



 ہمارا گھر قبرستان سے تھوڑے فاصلے پر تھا ۔ ایک دن ہم شام کے وقت کھیل گود میں مصروف تھے کہ اچانک میرا چھوٹا بھائی حمزہ ناراض ہو گیا اور قبرستان کی طرف بھاگ نکلا ۔ ہم حیران تھے کہ اچانک حمزہ کو کیا ہو گیا ہے ۔


شام کا سورج ڈھل چکا تھا اور اندھیرا تیزی سے چھا رہا تھا ۔ امی ابو نے مجھے ڈھوڈنے کے لیے کہا کہ جاو بھائی کو ڈھونڈ کر لے آو ۔ میرا نام علی ہے ۔۔ میں قبرستان دوڑتا ہوا پہنچا اور بھائی کو لائٹ کی مدد سے ڈھونڈنے لگا ۔ کیونکہ اس بہت اندھیرا ہو چکا تھا ۔ میں ساتھ ساتھ بھائی کو آوازیں بھی لگا رہا تھا کہ اچانک مجھ ایک بچے کے رونے کی آواز سنائی دی ۔



میں اس آواز کی جانب بڑھنےلگا ۔ قبرستان بہت بڑا تھا ۔اور یہ آواز قبرستان کے بالکل درمیان سے آرہی تھی ۔خیر میں آواز کی طرف بڑھنے لگا  ۔ جوں جوں میں آواز کی جانب بڑھتا رونے کی آواز تیزہوتی جاتی ۔ 


جب میں آواز کے بالکل قریب پہنچا تو دیکھتا ہوں کہ ایک بچہ مسلسل روے جارہا ہے ۔ میں سمجھا کہ میرا بھائی حمزہ ہے ۔ اورمیں نے اس کی طرف ہاتھ بڑھے تو میرے پیروں تلے زمین نکل گی۔ ایک بہت ڈرونی شکل نے جب واپس میری طرف پلٹ کے دیکھا۔ اس کے منہ میں آگ تھی اور آنکھیں خون سے بھری ہوئی۔



 اور جونہی وہ بچہ نما چیز پلٹی وہ آسمان تک بلند ہو گی اور بے شمار چیخنے کی آوازیں آنے لگی ۔ میں وہیں بے ہوش ہو گیا ۔اور میری بھی چیخیں نکل گیں ۔ مجھے گھر والوں نے ڈنڈھ لیا۔۔مگر مجھے پورا ہفتہ تیز بخار رہا ۔