Breaking

Tuesday, June 18, 2019

پاکستان کے تین پراسرار جگہیں جہاں روحوں کا بسیرا ہے

اسلام علیکم تمام دوست و احباب

 آج ہم آپ کو پاکستان کے تین پُراسرار جگہوں کے بارے میں بتائیں گے جیسے کہ آپ نے دنیا کی دوسری کی پراسرار کے بارے میں سن رکھا ہوگا کیا آپ جانتے ہیں کہ اس طرح کے مقامات پاکستان میں بھی موجود ہے

 پاکستان کے تین پراسرار جگہیں جہاں روحوں کا بسیرا ہے
 پاکستان کے تین پراسرار جگہیں جہاں روحوں کا بسیرا ہے


 جن کے بارے میں طرح طرح کی کہانیاں مشہور ہیں کچھ مقامات کے بارے میں یہ کہا جاتا ہے کہ یہاں پر پریاں راج کرتی ہیں تو کسی مقامات کے بارے میں کہا جاتا ہے کہ یہاں روحیں بھی رہتی ہیں

کوہ چلتن

۔سب سے پہلے ہی کوہ چلتن جو کوئٹہ میں موجود ہے۔کوئٹہ میں موجود اس پہاڑی سلسلے کو کوہ چلتن کہا جاتا ہے



۔ جس کا مطلب ہے 40 جسم۔جن کے بارے میں مشہور ہے کہ ان کے والدین نے ان چالیس روحوں کو اکیلا مرنے کے لیے چھوڑ دیا تھا۔ لوگوں کا کہنا ہے کہ یہاں پر بھٹکنے والے روحوں کی آوازیں بھی آتی ہیں

مکلی کا قبرستان

 پاکستان کی دوسرے نمبر پر اسرار جگہ مکلی کا قبرستان ہے یہ قبرستان 8 کلومیٹر کے فاصلے پر محیط ہے اس میں لاکھوں کب رہے ہیں جن میں بادشاہوں کی قبریں ملکوں کی قبریں اور علماء کی قبریں شامل ہیں۔


 اور یہ ایشیا کا سب سے بڑا قبرستان ہے جس کا رقبہ تقریبا سات آٹھ کلومیٹر پر مشتمل ہے اور بڑی تعداد میں لوگ یہاں ہر سال زیارت کرنے کے لیے آتے ہیں یہ قبرستان دو ادوار پر مشتمل ہے


شہر روغان


پاکستان کا تیسرا پرسرار مقام شہر روغان ہے یہ شہر بلوچستان میں واقع ہے اور یہ پاکستان کے پراسرار مقامات میں سے ایک ہے۔ اس مقام کے حوالے سے کہا جاتا ہے کہ یہاں جنات کا بسیرا ہے اور حضرت سلیمان علیہ السلام کے زمانے میں یہاں ایک شہزادی رہتی تھی جس پر جنوں کا سایہ تھا ایک روایت ہے کہ شہزادی کو کئ شہزادوں نے جنات سے چھٹکارا حاصل کرنے کے لئے کوشش کی مگر وہ ناکام رہے آخرکار شہزادہ سیف الملوک آیا اور اس نے اسے شہزادی کو جنات سے نجات دلائی۔ لیکن ابھی تک مشہور ہے کہ وہ جنات ابھی تک ان پہاڑیوں اور اس کی ندیوں پر حکومت کرتے ہیں۔